میں اور ماموں کی بیٹی میری کزن


ہیلو تمام ریڈرز کو میرا سلام! میں کا ریگولر ریڈر ہوں میرا نام عثمان ہے میرا نام عثمان ہے اور عمر 25سال ہے فیروز پور روڈ پر ایک فیکٹری میں کام کرتا ہوں اور لاہور ڈیفنس میں اپنے ماموں کے گھر رہتا ہوں میرے ماموں کے گھر ماموں کے گھر ماموں ماموں ، مامی ، ان کی بیٹی ماریہ اور میں رہتا ہوں۔ ماریہ 32 سال کی خوبصورت لڑکی ہے اس کی فگر    36-25-35 ہے اور ساتھ میں سکیسی بھی بہت ہے یہ سچا واقعہ آج سے2 سال پہلے کا ہے ۔ چلیں اب سٹوری کی طرف آتے ہیں۔

آج سے دو سال پہلے کی بات ہے میں اپنے ماموں کے ہاں کام کے سلسلے میں کچھ دن رہنے کے لیے آیا بعد میں مجھے اپنا خود رہا ئش کا انتظام کرنا تھا۔ میں ماموں کے گھر تقریبا 4 سال بعد آیا تھا ماموں اور مامی جاب کرتے ہیں اور ماریہ ایم اے کرنے کے بعد گھر میں فارغ ہوتی ہے 4 سال پہلے جب میں ماریہ سے ملا تھا تو اس وقت ماریہ کی فگر کچھ خاص نہیں تھی اور اس وقت میں نے بھی کبھی سیکس کے بارے میں نہیں سوچا تھا اور وہ بھی ماریہ کے ساتھ ۔ مگر اب جب میں ان کے گھر رہنے کے لئے آیا تو اب جب اسے دیکھا تو اسے دیکھتا ہی رہ گیاکیونکہ اب تو وہ کافی بدل گئی تھی اور میرا لن بھی اکڑ کر کھڑا ہو گیا تھااور کیوں نہ کھڑا ہوتا اسے تو اگر کوئی دیکھ لے تو نظر ہٹانے کو دل نہ کرے خیر پہلا دن تو ہمارا باتیں کرتے اور ایک دوسرے کے بارے میں پوچھتے گزرا ۔ ماموں کے گھر میں ٹوٹل 4 رومز ہیں ایک ماموں اور مامی کا ایک میں کزن رہتی تھی ایک ڈرائنگ روم اور ایک خالی تھا جو مجھے ملا ۔ رات  12 بجے ہم لوگ سونے کے لئے اپنے اپنے رومز میں آگئے میں نےکمرے میں آ کر کپڑے بدلے اور سونے کے لئے لیٹ گیا لیکن مجھے نیند نہیں آ رہی تھی اور میرے ذہن میں بار بار ماریہ کا چہرہ آ رہا تھا اور اس کو سوچ کر ہی میرا لن کھڑا ہونے لگا تو میں نے اپنی شلوار اتار کے لن کو ہاتھ  میں کے کرمسلنے لگا 15 منٹ بعد میرے لن سے منی نکلنے لگی اور میں نے کپڑے سے اپنا لن صاف کرکے ایسے ہی لیٹا رہا پھر پتا نہیں کب نیند آ گئی رات کو اچانک میری آنکھ کھل گئی مجھے ایسا محسوس ہوا جیسا کہ کمرے میں کوئی ہے پر اندھیرا ہونے کی وجہ سے نظر نہیں آ رہا تھا بس اتنا پتہ چلا کہ وہ کوئی عورت ہے خیر میں لیٹا رہا اور دیکھنا چاہتا تھا کہ کون ہے اور کیا کرنا چاہتی ہے وہ آہستہ سے میرے قریب آئی اور میرے چہرے کو دیکھا میں نے جلدی سے اپنی آنکھیں بند کرلیں تاکہ اسےیہی پتہ چلے کہ میں سو رہا ہوں وہ تھوڑی دیر ایسے ہی پاس بیٹھی رہی کچھ دیر بعد اس نے اپنا ہاتھ میری قمیض کے اندر ڈال کر میرے جسم پر پھرنے لگی پھر میں نے اٹھنے کی ایکٹنگ کی اور اس کا ہاتھ پکڑ کر اسے بولا کہ کون ہے تو وہ بولی کہ وہ ماریہ ہے پھر میں نے پوچھا کہ کیسے اور کیا کر رہی ہے ؟ تو وہ بولی مجھے تمہارا لن بہت پسند آ گیا تھا تو سوچا اس سے تھوڑا کھیل لوں اس وقت میں بولا کہ تم نے میرا لن کہاں دیکھ لیا تھا وہ بولی کہ جب تم سونے کے لئے آئے تھے اور اپنے لن کی مٹھ مار رہے تھے اس وقت میں دروازے سے دیکھ رہی تھی تو مجھے تمہارا لن اتنا اچھا لگا اور اسی وقت میں نے سوچ لیا تھا کہ اس لن کو اپنی پھدی میں آج رات ہی لینا ہے پھر جب سارے سو گئے تو میں تمہارے روم میں آ گئی اور تم کو سوتا دیکھ کر تمہارے جسم پر ہاتھ پھرنے لگی تاکہ تم اٹھ جاؤ اور میرا ساتھ دو کیونکہ مجھے پتہ ہے کہ تم بھی یہی چاہتے ہو کیونکہ جب سے تم آئے ہو مجھے کن نظروں سے دیکھ رہے تھے مجھے پتہ چل رہا تھا اس لئے میں نے سوچا کہ جب دونوں یہی چاہتے ہیں تو پھر اس کام میں دیر کیوں اس لیے میں یہاں ہوں اب دیکھاؤ اپنا لن تو میں نے کہا کہ خود ہی نکال کر دیکھ لو تو اس نے کمبل ہٹایا اور میری شلوار تو پہلے کی اتری ہوئی تھی اور میرا 7 انچ کا لن بالکل تنا ہوا اس کے سامنے تھاماریہ نے پیار سےلن پر ہاتھ پھیر اور دیر تک میرے کو پیار کرتی رہی میں اس سے کہنے لگا تھا کہ بس پہی کرتی رہوگی یا کچھ اور بھی کرہ گی لیکن میرے کچھ کہنے سے پہلے ہی ماریہ میرے سے لپٹ گئی اس کے ممے میرے سینے کے ساتھ لگ گئے اور ماریہ نے اپنے ہونٹوں کو میرے ہونٹ سے ملا کر کسنگ کرنا شروع کر دی تو میں نے بھی اس کا ساتھ دینے لگا مجھے نہیں پتہ تھا کہ میرا کام اتنی جلدی ہو جائے گا اور ماریہ کے ممے دیکھ سکوں گا ہم کانی دیر کسنگ کرتے رہے میں نے ماریہ سے کہا کہ مجھے اپنے ممے دیکھائے تو اس نے کہا کہ خود ہی قمیض اتار کر دیکھ لو میں سے ماریہ کی قمیض اتاری تو نیچے اس نے بلیک کلر کی برا پہنی ہویہ تھی جس میں اس کے ممے باہر آنے کو بیتاب تھے میں نے دیر نہ کرتے ہوئے پیچھے سے برا کی ہک کھول دی اور جب برا اتاری تو اس کے سفید گورے ممے اور اس پر پنک نیپلز کو دیکھ کر مجھے بہت اچھا لگا اور میں نے جیسے ہی اس کے نیپلز کو ٹچ کیا تو ماریہ نے سکھاری لی پھر میں نے اس کے نیپلز کو دونوں ہاتھوں سے مسلنے لگا تو اسی دوران ماریہ نے میرا منہ پکڑ کر کہا میں اپنی زبان باہر نکالوں میں نے زبان نکالی تو اس نے میری زبان کو چوسنا شروع کر دیا وہ میری زبان چوستی رہی اور میں ایک ہاتھ سے اس کے نیپلز مسلتا رہا اور دوسرا ہاتھ اس کی پھدی کی طرف لیجانے لگا۔
پارٹ 2 پڑھنے کے لئے میرے اگلے حصے انتطار کریں میں جلد ہی اگلا حصہ پوسٹ کروں گالیکن اس سے پہلے مجھے آپ کی رائےکا انتظار رہے گا پھر ہی میں اس سٹوری کا اگلا پارٹ پوسٹ کروں گااور اگر لاہورکی لڑکی یا کرنا چاہےSecrete Sex Relationآنٹی
تو بھی مجھے رابطہ کیا جا سکتا ہے۔یہ میرا موبائل نمبر 03424480409ہے۔

   usmanahmad240@yahoo.com یہ ہے ۔yahoo messenger


0 comments:

Post a Comment

 

© 2011 Sexy Urdu And Hindi Font Stories - Designed by Mukund | ToS | Privacy Policy | Sitemap

About Us | Contact Us | Write For Us